اوتھ کمشنر اور نوٹری پبلک۔ فرائض اور اختیارات

اوتھ کمشنر اور نوٹری پبلک۔ فرائض اور اختیارات


ہر شعبہ زندگی کا نظام کسی نہ کسی قانون ضابطہ کے ذریعے چلا یا جاتا ہے۔ بعض معاملات ایسے ہوتے ہیں جن سے عام آدمی کا واسطہ روز مرہ زندگی میں پڑتا ہے لیکن اُسے اس کی قانونی حیثیت طریقہ کار سے عدم واقفیت کی بناء پر بے شمار مشکلات اور پیچیدگیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اوتھ کمشنر اور نوٹری پبلک سے بھی ٹیلی فون کی درخواست سے لیکر میٹر بجلی، نام کی تبدیلی وغیرہ تک بیاں حلفی کی تصدیق کیلئے عام آدمی جس کے باقاعدہ عدالتوں میں مقدمات زیر سماعت نہیں ہوتے اسکا واسطہ پڑتا ہے اس کے علاوہ جائیداد کی خریدو فروخت کے اقرار نامہ جات بیرون ملک ارسال کرنے کیلئے دستاویز اور انکے ترجمہ کے سلسلہ میں بھی تصدیق کی ضرورت پیش آنے پر کچہری کے چکر لگانا پڑتے ہیں۔
کون سی دستاویزات اوتھ کمشنر سے تصدیق ہو سکتی ہیں اور کن دستاویزات کیلئے نوٹری پبلک کی تصدیق ضروری ہے۔ انکی تقرری کس طرح کی جاتی ہے، کون تقرری کیلئے اہل ہے اور ان کے کیا اختیارات اور فرائض ہیں یہ جاننے کیلئے اوتھز ایکٹ 1873 ء اور نوٹریز آرڈیننس 1961 اور اس سے متعلقہ مغربی پاکستان نوٹریز رولز 1965 کی تفصیلات جاننا ضروری ہے۔

اوتھ کمشنر۔ حلف دینے کا اختیار

دفعہ 4 اوتھز ایکٹ 1873 کے مطابق درج ذیل عدالتوں کویا انکی جانب سے اس مقصد کیلئے مقرر کئے گئے شخص کو حلف دینے (جسے ہم روز مرہ استعمال میں حلف لینا کہتے ہیں) کا اختیار ہے۔
1۔ تمام عدالتوں اور افراد جنہیں بمطابق قانون یا فریقین کی رضا مندی سے شہادت لینے کا اختیار ہو۔
2۔ کمانڈنگ آفیسر یا کسی آرمی نیوی یا ایئر فورس یا شپ جو افواج سے متعلق ہو بشرطیکہ
(i)۔ حلف دینے کا اختیار اپنے اسٹیشن کی حد تک ہوگا۔
(ii)۔ جسٹس آف دی پیس کو ایسا اختیار پورے پاکستان میں حاصل ہوگا۔

ہائی کورٹ رولز اینڈ آرڈر والیم 4 باب12 پارٹB
رول5: اوتھ کمشنر کی تقرری اور فیس

1۔ دفعہ 131(B) ضابطہ دیوانی کے مطابق قریباً دو یا چار لیگل پریکٹیشنرز ضلعی ہیڈ کوارٹر اور ایک ہر اس اسٹیشن پر جہاں پر ماتحت جج کام کرتا ہو کا حلف ناموں کی تصدیق کیلئے تقرر کیا جائے گا۔
2۔ ایسے کمشنرز کا تقرر عام طور پر ایسے پریکٹیشنرز میں سے کیا جائے گا جنکی بار ایسوسی ایشن میں کم از کم تین سال کی پریکٹس ہو اور وہ بطور کمشنر اپنی 13 سال کی پریکٹس کی معیاد پوری ہونے تک اس عہدہ پر فائز رہ سکتے ہیں ماسوائے جبکہ انکا کام تسلی بخش ہو یا جب تک ہائی کورٹ کے مزید احکامات تک ان سب سے جو بھی پہلے ہو۔ ان تیرہ سالوں کی پریکٹس میں وہ عرصہ بھی شامل ہوگا جس میں لیگل پریکٹیشنرز نے پریکٹس نہ بھی کی ہو۔
3۔ کمشنرز ہر بیان حلفی کی تصدیق کا ایک روپیہ معاوضہ وصول کر سکتا ہے اور پیرا نمبر 7 میں بیان کردہ رجسٹر میں بیان حلفی کا اندراج کرے گا۔ کمشنر وصول کردہ معاوضہ کی تحریر رسید محلف کو دے گا وہ رسید چھاپہ شدہ ہوگی جس کا ایک کاؤنٹر فائل کمشنر اپنے ریکارڈ میں برائے انسپکشن محفوظ کردے گا۔ اگر قانونی اسٹامپ 1899 کے شیڈول 1 کے آرٹیکل نمبر 4 کے مطابق کوئی ڈیوٹی بیان حلفی پر لاگو ہو تو وہ اس معاوضہ کے علاوہ ہوگی۔
کمشنر اگر بیان حلفی دینے والے شخص کی رہائش پر جاکر بیان حلفی تصدیق کرتا ہے تو اوپر بیان کردہ معاوضہ کے علاوہ ایک روپیہ آٹھ آنہ مزید معاوضہ کا حقدار ہوگا۔
رول 11 کے مطابق اگر بیان حلفی دینے والے شخص کو عدالت مجسٹریٹ یا کوئی دیگر مقرر کردہ آفیسر ذاتی طور پر نہ جانتا ہو تو اسکی شناخت ایسے شخص سے کروائے گا جسے وہ ذاتی طور پر جانتا ہو اور اس کی بابت بیان حلفی کے نیچے اندراج کیا جائے گا۔
رول 9 بیان حلفی کے مندرجات سے متعلق ہے۔
(i)۔ ہر بیان حلفی جو کسی واقعہ سے متعلق ہو پیرا گراف میں دیا جائے گا اور پیرا گراف نمبر وار دیئے جائیں گے۔
(ii)۔ ہر شخص جو کسی دعویٰ جس میں بیان حلفی دیا جارہا ہو کے مدعی یا مدعا علیہ کے علاوہ ہو تو وہ بیان حلفی میں اپنی مکمل شناخت، نام و پتہ، پیشہ اور مقام رہائش تفصیل سے بیان کریں گے۔
(iii)۔ جب محلف کوئی بیان اپنے ذاتی علم سے دے رہا ہو تو ایسے الفاظ استعمال کرے گا ”کہ میں حلفاً بیان کرتا ہوں کہ……..“
(iv)۔ اور وہ ایسا بیان کسی کی اطلاع پر دے رہا ہو تو اس کی تحریر کچھ اس طرح ہو گی کہ ”میں حلفاً بیان کرتا ہوں کہ بیان میری اطلاع کے مطابق درست ہے“۔

نوٹری پبلک

نوٹری کی تقرری اور دیگر معاملات کو نوٹریز آرڈیننس1961 اور مغربی پاکستان نوٹریز رولز 1965 کے مطابق طے کیا گیا ہے۔
دفعہ5 نوٹریز آرڈیننس کے مطابق کوئی شخص جو بطور نوٹری کام کرنے کا خواہشمند ہو صوبائی حکومت کو درخواست دیکر اپنا نام اس رجسٹر میں شامل کروا سکتا ہے جو حکومت دفعہ 4 کے مطابق تیار کرتی ہے۔ نوٹری کو ایسا سرٹیفکیٹ تین سال کی مدت کیلئے جاری کیا جائے گا اور تین سال کی مدت کے اختتام پر مقررہ فیس کی ادائیگی پر مزید تین سال کیلئے سرٹیفکیٹ کی تجدید کروائی جائے گی۔
دفعہ6۔ حکومت ہر سال جنوری کے آخر تک سرکاری گزٹ میں ان تمام اشخاص کے نام شائع کرے گی جنکو بطور نوٹری کام کرنے کیلئے سرٹیفکیٹ جاری کیا گیا ہو۔
دفعہ8۔ نوٹری اپنے عہدہ کے لحاظ سے درج ذیل افعال سرانجام دے گا:
(i) کسی بھی دستاویز کی تکمیل و تصدیق اور ادائیگی رقم کی تصدیق کرے گا۔
(ii) کسی پرونوٹ، ہنڈی یا بل آف ایکسچینج کی قبولیت یا ادائیگی یا بہتر ضمانت کیلئے پیش کرے گا۔
(iii) یادداشت یا احتجاج بابت عدم قبولیت یا عدم ادائیگی پر امیری نوٹ، ہنڈی یا مبادلہ ہنڈی یا احتجاج برائے بہتر ضمانت بمطابق قانون دستاویز قابل بیع و شرعی ایکٹ 1881 یا اس احتجاج یا یادداشت سے متعلق نوٹس جاری کرے گا۔
(iv) کمرشل معاملات میں یادداشت یا احتجاج۔
(v) حلف دینا یا بیان حلفی کسی بھی شخص سے لینا۔
(vi) باٹری بانڈز اور اس سے متعلق دیگر دستاویزات قرضہ تیار کرانا۔
(vii) ایسی دستاویز تیار کرنا اور تصدیق کرنا جو پاکستان سے باہر کسی بھی زبان میں قابل استعمال ہوں۔
(viii) کسی بھی زبان میں دستاویز کا ترجمہ کرنا اور تصدیق کرنا۔
(ix) اور دیگر کوئی کام جو اس سلسلہ میں بیان کیا گیا ہو۔
دفعہ 8 کی ذیلی دفعہ 1 میں بیان کردہ کوئی بھی کام ”نوٹریل ایکٹ“ تسلیم نہ کیا جائے گا اگر اس پر نوٹری نے اپنے دستخط اور مہر ثبت نہ کی ہو۔
دفعہ9 کے مطابق کوئی بھی شخص بطور نوٹری کام یا آفیشل مہر استعمال نہیں کر سکتا جب تک وہ بطور نوٹری پریکٹس کا لائسنس زیر دفعہ 5 نہ رکھتا ہو۔
دفعہ10 کے مطابق حکومت دفعہ4 کے مطابق تیار کردہ رجسٹر میں سے کسی نوٹری کا نام خارج کردے گی جب:
(i) وہ ایسا کرنے کی درخواست کرے۔
(ii) اس نے مقررہ فیس جو قابل ادائیگی ہو ادا نہ کی ہو۔
(iii) اگر وہ دیوالیہ ہو جائے۔
(iv) انکوائری میں پروفیشنل یا اوتھ مس کنڈکٹ کا مرتکب پایا جائے یا حکومت کی رائے میں وہ بطور نوٹری کام کرنے کیلئے ان فٹ ہو۔
دفعہ12 کے مطابق کوئی شخص جو:
(i) جو بغیر مقرر ہوئے نوٹری اپنے آپ کو نوٹری ظاہر کرے۔
(ii) بطور نوٹری کام کرے یا نوٹریل ایکٹ دفعہ9 کی خلاف ورزی میں کرے تو اسے تین ماہ تک سزائے قید یا جرمانہ یا دونوں سزائیں دی جا سکتی ہیں۔

مغربی پاکستان نوٹریز رولز 1965
رول 3: بطور نوٹری تقرری کیلئے اہلیت

کوئی شخص بطور نوٹری تقرری کا اہل نہ ہوگا جب تک وہ درخواست دینے کی تاریخ پر درج ذیل اہلیت کا حامل نہ ہو۔
(i) وہ ماسٹر آف فکیلٹیز انگلینڈ کی طرف سے مقرر شد ہو۔ یا
(ii) وہ بطور لیگل پریکٹیشنر عرصہ پانچ سال سے پریکٹس کررہا ہو۔

رول4: عمر کی حد

کوئی بھی شخص جو 30 سال سے کم عمر کا ہو نوٹری مقرر نہیں ہو سکتا اور 65 سال کی عمر مکمل ہونے پر اسے ہر صورت میں اس عہدہ سے علیحدہ ہونا پڑے گا۔

رول10۔ تقرری و تجدید سرٹیفکیٹ کی فیس

نوٹری کی تقرری یا تصدیق سرٹیفکیٹ پر درج ذیل فیس قابل ادائیگی ہوگی۔
۱۔ تقرری کا سرٹیفکیٹ جاری کروانے پر 100 روپے
۲۔ مقرر شدہ ایریا کی توسیع کیلئے 50 روپے
۳۔ تجدید سرٹیفکیٹ کے لئے 25 روپے
۴۔ ڈپلیکیٹ سرٹیفکیٹ کے اجراء کیلئے 5 روپے

رول 11 نوٹری کے کام کی اجرت

ہر نوٹری درج ذیل شرح سے کام کی اجرت حاصل کرے گا۔
(A) کسی دستاویز کی یادداشت پر فیس:
۱۔ جب رقم 1000 روپے سے زائد نہ ہو۔ 5 روپے
۲۔ جب رقم 1000 سے زائد جبکہ5000 سے زائد نہ ہو۔ 8 روپے
۳۔ جب رقم 5000 سے زائد جبکہ 20000 سے زائد نہ ہو۔ 12 روپے
۴۔ جب رقم 20000 سے زائد جبکہ 30000 سے زائد نہ ہو۔ 16 روپے
۵۔ جب رقم 30000 سے زائد جبکہ 50000 سے زائد نہ ہو۔ 20 روپے
۶۔ جب رقم 50000 روپے سے زائد ہو۔ 25 روپے
(B) دستاویز کے احتجاج پر فیس:
۱۔ جب رقم 1000 روپے سے زائد نہ ہو۔ 10 روپے
۲۔ جب رقم 1000 سے زائد جبکہ5000 سے زائد نہ ہو۔ 12 روپے
۳۔ جب رقم 5000 سے زائد جبکہ 20000 سے زائد نہ ہو۔ 15 روپے
۴۔ جب رقم 20000 سے زائد جبکہ 30000 سے زائد نہ ہو۔ 18 روپے
۵۔ جب رقم 30000 سے زائد جبکہ 40000 سے زائد نہ ہو۔ 21 روپے
۶۔ جب رقم 40000 سے زائد جبکہ50000 سے زائد نہ ہو۔ 24 روپے
۷۔ جب رقم 50000 سے زائد جبکہ 60000 سے زائد نہ ہو۔ 27 روپے
۸۔ جب رقم 60000 سے زائد جبکہ 70000 سے زائد نہ ہو۔ 30 روپے
۹۔ جب رقم 70000 سے زائد جبکہ 80000 سے زائد نہ ہو۔ 33 روپے
۰۱۔ جب رقم 80000 سے زائد جبکہ 90000 سے زائد نہ ہو۔ 36 روپے
۱۱۔ جب رقم 90000 سے زائد جبکہ ایک لاکھ سے زائد نہ ہو۔ 40 روپے
۲۱۔ جب رقم ایک لاکھ روپے سے زائد ہو تو۔ 50 روپے
(C) جب کسی رقم جو ادائیگی کے ذمہ دار شخص کے علاوہ ادا کرے تو اسکے اقرار اور اعلان کے لئے۔ 5 روپے
(D) کسی یادداشت کی ڈپلکیٹ کیلئے اصل کی نصف فیس ہوگی۔
(E) کسی دستاویز(اقرار نامہ وغیرہ)کی تکمیل و تصدیق کیلئے۔ 5 روپے (F) کسی پراسیری نوٹ ہنڈی یا مبادلہ ہنڈی کو قبولیت کے لئے پیش کرنے یا بہتر ضمانت طلب کرنے پر۔ 15 روپے
(G) کسی شخص کو حلف دینے یا بیان حلفی کی تصدیق جو دفعہ8 کے مطابق ہو 2.50 روپے
(H) کسی دستاویز کی تیاری جو پاکستان سے باہر قابل استعمال ہو۔ 50 روپے
(I) کسی دستاویز کی تصدیق جو پاکستان سے باہر قابل استعمال ہو۔ 25 روپے
(J) کسی دستاویز کو کسی زبان سے دوسری زبان میں ترجمہ کرنے پر۔ 25 روپے
(K) کسی دیگر موٹری کے کام پر جو رقم حکومت گاہے بگاہے مقرر کرے۔
(2) سب رول (1) میں بیان کردہ افعال سے متعلق جب نوٹری اپنے دفتر سے ایک میل کے فاصلہ سے زائد پر جاکر کام کرے تو اسکا معاوضہ حسب ذیل ہوگا۔
(a) جب نوٹری گورنمنٹ کا افسر ہو تو سفری الاؤنس مغربی پاکستان سفری الاؤنس رولز کے مطابق۔
(b) جب نوٹری گورنمنٹ کا افسر نہ ہو تو۔
(i) جب وہ جگہ جہاں اسے جانا ہو اسکے اسٹیشن کی حدود میں ہی ہو تو مزید5 روپے
(ii) جب وہ جگہ جہاں جاکر اسے کام کرنا ہو اسکے اسٹیشن کے علاوہ ہو تو سفری الاؤنس 25 پیسہ فی میل جب وہ ریل سے سفر کرے اور 50 پیسہ فی میل جب وہ سڑک سے سفر کرے۔

رول 12: نوٹری کے کام سے متعلق معاملات

1۔ نوٹری اپنے افعال کی انجام دہی کیلئے فارمIII سے XIV استعمال کرے گا۔
2۔ ہر نوٹری ایک کتاب تیار کرے گا جسکے صفحات کو سلسلہ وار نمبر لگے ہوں گے جسے نوٹری رجسٹر کیا جائے گا جس میں وہ ریکارڈ رکھے گا۔
(i) تمام Payment of honour کے اقرار کی تفصیل۔
(ii) ارسال کردہ نوٹس وغیرہ کی لفظ بہ لفظ کاپی یا دستاویزات کی یادداشت۔
(iii) تمام سرٹیفکیٹ جو اس نے برائے تصدیق یا تکمیل دستاویزات جاری کئے ہوں کا اندراج اور ہر اندراج پر نوٹری کے دستخط ہوں گے۔
3۔ نوٹری جو رجسٹر استعمال میں لائے گا اسکے ٹائیٹل صفحہ پر اسکے صفحات کی تعداد کا سرٹیفکیٹ لکھے گا جس پر نوٹری کے دستخط اور تاریخ ہوگی۔
4۔ ڈسٹرکٹ جج یا حکومت کی طرف سے مقرر کردہ کوئی دیگر افسر سال میں کم از کم دو دفعہ نوٹری کے رجسٹر کا ان تاریخوں پر معائنہ کرے گا جو وہ اسکے لئے مقرر کرے۔
5۔ رجسٹر کے معائنہ پر ڈسٹرکٹ جج یا دیگر افسر نوٹری کے خلاف حکومت کو کاروائی کرنے کیلئے رپورٹ ارسال کر سکتا ہے۔
6۔ جب دستاویز کوئی یادداشت یا احتجاج انگریزی کے علاوہ کسی زبان میں ہو تو نوٹری اسے انگریزی میں یا اسی زبان میں اپنے رجسٹر میں درج کرے گی۔
7۔ نوٹری بلز اور نوٹز وغیرہ کو پیش کرنے سے متعلق بات کا قانون دستاویز قابل بیع و شرعی 1881 کو مدنظر رکھے گا۔
8۔ نوٹری کو تفویض کئے گئے فرائض زیر دفعہ 8(1) کی کلاز A,B میں اضافہ کرتے ہوئے درج ذیل افعال سر انجام دینے کے اختیارات بھی ہیں۔
(i) دستاویز منتقلی جائیداد سمیت دیگر دستاویزات کی تحریرو تکمیل و تصدیق اپنے عہدہ کی مہر کے ساتھ کر سکتا ہے۔
(ii) دستاویز قابل بیع و شرعی سے متعلق عام لین دین کی تصدیق کر سکتا ہے۔
(iii) وصیت یا دیگر وصیتی دستاویز تیار کر سکتا ہے۔
9۔ نوٹری ہر فیس کی وصولی کی رسید جاری کرے گا اور اسکے اندراج کیلئے ایک رجسٹر تیار کرے گا۔

رول 13: نوٹری کی مہر

ہر نوٹری گول مہر استعمال کرے گا جس میں اسکا نام اور اسکے علاقہ کا نام جسکے لئے وہ مقرر ہوا ہے اور الفاظ نوٹری اور اگر وہ اپنے سرکاری رتبہ یا عہدہ کی بناء پر نوٹری مقرر ہو ا ہو تو اپنے عہدہ کے نام اور علاقہ جسکے لئے اسکا تقرر ہوا ہے اور الفاظ نوٹری تحریر کرے گا۔

رول 14: مس کنڈکٹ کے الزامات کی انکوائری برخلاف نوٹری

1۔ جب نوٹری پر پروفیشنل یا کسی دیگر قسم کے مس کنڈکٹ کا الزام ہو تو حکومت مجاز اتھارٹی کو اسکی بابت انکوائری کرنے کا حکم دے گی۔
2۔ مجاز اتھارٹی درخواست دہندہ اور نوٹری کو اپنا مؤقف پیش کرنے کا موقع دیکر اور شہادت زبانی یا دستاویزی پیش کردہ کو زیر غور لاکر حکومت کو رپورٹ بابت انکوائری پیش کرے گی۔
3۔ اگر حکومت مجازاتھارٹی کی طرف سے پیش کردہ رپورٹ کہ نوٹری کے خلاف کاروائی ہونا چاہئے تو حکومت مس کنڈکٹ کی نوعیت کے لحاظ سے:
(i) نوٹری کا سرٹیفکیٹ لائسنس منسوخ کرکے اسے ہمیشہ کیلئے نااہل قرار دے۔
(ii) کسی مخصوص وقت کیلئے اسکو معطل کر سکتی ہے۔
(iii) اسے وارننگ سے کر چھوڑ سکتی ہے۔
(PLD 1968 Karachi 350)
ایک شخص جو نوٹری ایکٹ 1961 جو 5 جنوری 1966 کو لاگو ہوا اس سے قبل 1881 Negotiable Instrument Act کی دفعہ 138 کے تحت لا محدود مدت کے لئے نوٹری پبلک مقرر ہوا اسکووکالت کی پانچ سالہ مدت نہ ہونے کی بناء پر فارغ کرکے اسکی جگہ ایک پانچ سالہ وکالت کے حامل شخص کو نوٹری مققرر کیا جس کے خلاف رٹ دائر کی گئی جو کارج کردی گئی اور قرار دیا گیا کہ نوٹری پبلک سول سرونٹ کی تعریف میں نہیں آتا اور اسے فارغ کرنے کیلئے باقاعدہ نوٹس دیئے جانے کی ضرورت نہیں۔ (1971 SCMR 557)
رٹ خارج ہونے پر متاثرہ شخص نے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی جس میں اسے بحال کئے جانے کی حد تک اپیل خارج کر دی گئی جبکہ قرار دیا گیا کہ اسے فارغ کئے جانے سے قبل باقاعدہ نوٹس دے کر صفائی کا موقع دیا جانا چاہئے۔
(2008 SCMR 694)
سپریم کورٹ آف پاکستان نے درخواست اجازت برائے اپیل باقاعدہ سماعت کیلئے منظور کرلی جس میں یہ طے کیا جانا تھا کہ ایکٹN-I-Act 1881 کی دفعہ 38 کے تحت وفاقی حکومت کسی بھی شخص کو نوٹری مقرر کر سکتی ہے نوٹری ایکٹ اور رولز کے بعد غیر مؤثر ہو چکی ہے یا نوٹری رولز 1965 میں یہ شرط کے لیگل پریکٹیشنرز کے علاوہ کسی کو نوٹری پبلک مقرر نہیں کیا جا سکتا غلط اور غیر قانونیاور غیر مؤثر ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں