انٹرویو۔ نسیم آفریدی، ضلع ناظم کوھاٹ

انٹرویو۔ نسیم آفریدی، ضلع ناظم کوھاٹ


میزبان: سیدفیضان علی شاہ بنوری

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) سابقہ ضلع ناظم مولانا نیاز محمد کو ہم نے نہیں ہٹایا خود استعفیٰ دے کر گئے ہیں موجودہ ڈسٹرکٹ گورنمنٹ آئین کے مطابق کام کر رہی ہے اور رولز آف بزنس 2013 کے اختیارات کے مطابق عوام کی خدمت میں مصروف ہیں انتخابات سے پہلے جن اختیارات کا کہا گیا تھا وہ تمام ضلعی حکومتوں کو حاصل ہیں محکمہ تعلیم‘ صحت‘ فشریز‘ لائیو سٹاک‘ زراعت اور لوکل گورنمنٹ ہماری نگرانی میں کام کر رہے ہیں ان خیالات کا اظہار ضلع ناظم کوھاٹ نسیم آفریدی نے القانون کو دیئے خصوصی انٹرویو میں کیا انہوں نے کہا کہ جولائی 2017 میں بطور ڈسٹرکٹ ناظم میں نے اپنے عہدے کا حلف اٹھایا اورآج تک اپنے حلف کی پاسداری کرتے ہوئے بلاتفریق عوام کی خدمت میں مصروف عمل ہیں۔

گلیوں‘ نالیوں کی سیاست میں مصروف ممبران اسمبلی کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ اس وقت عوام کا سب سے بڑا مطالبہ اپنے ممبران اسمبلی سے گلیوں نالیوں کی تعمیر اور واٹر سپلائی کے منصوبوں کا ہے لہٰذا وقت اور عوام کے مطالبے کو دیکھتے ہوئے جس طریقے سے کام ہو رہا ہے وہ درست ہے کیوں کہ ناظمین ہوں یا کونسلران یا پھر منتخب ممبران قومی اور صوبائی اسمبلی سب کا نعرہ ایک ہی ہے یعنی۔ عوام کی خدمت‘ عوامی مسائل کے حوالے سے ضلع ناظم کا کہنا تھا کہ اس وقت کوھاٹ میں عوام کو سب سے بڑا مسئلہ ٹریفک سسٹم سے ہے اور بھی کئی مسائل ہیں جن میں سکولوں میں اساتذہ کی کمی یا پینے کے صاف پانی کی فراہمی اور کافی مسئلوں پر ضلعی حکومت نے قابو پا لیا ہے مگر ٹریفک کا مسئلہ تاحال مکمل حل نہ ہو سکا جس سے عوام کو تکلیف کا سامنا ہے تبدیلی کے نعرے کے حوالے نسیم آفریدی سے نے بتایا کہ تبدیلی سے مراد نظام کی تبدیلی تھی اور نظام کی تبدیلی میں صوبائی حکومت کافی حد تک کامیاب ہو چکی ہے آج تمام محکمے سیاسی مداخلت سے پاک ہیں محکمہ تعلیم ہو یا صحت یا پھر پولیس تمام محکموں کو رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ 2013 کے تحت عوام کا جوابدہ بنا دیا ہے اگر اپوزیشن تعصب کی عینک اتار کر دیکھے تو تبدیلی واضح نظر آ جائے گی جس کی چھوٹی سی مثال کوھاٹ میں سڑکوں کی تعمیر ہے ماضی میں روڈ کیسے راتوں رات بنتے تھے اور آج کیسے سفالٹ روڈ بن رہے ہیں عوام خود موازنہ کر سکتی ہے محکموں میں کمیشن کے حوالے سے ضلع ناظم کا کہنا تھا کہ ہماری صوبائی حکومت نے کام کے بہترین معیار کے لیے ٹھیکیداروں کو اچھے ریٹ فراہم کیے کمیشن سسٹم کا خاتمہ کیا گیا خفیہ اور مک مکا کر کے ٹینڈر لینے کا سلسلہ بند کیا محکموں کو کام کرنے کی آزادی دی تمام ٹھیکے آن لائن ٹینڈرنگ کے ذریعے کروائے اگر کوئی کمیشن لینے کی بات کرتا ہے تو وہ میدان میں آ کر ثابت کرے ہم کمیشن لینے والے سرکاری ملازم کو عبرت کا نشان بنا دیں گے جبکہ کمیشن دینے والوں کو ہمیشہ کے لیے بلیک لسٹ کر دیں گے۔

انکروچمنٹ کے خلاف اور مہنگائی کے خلاف روزانہ کی بنیادوں پر چھاپوں اور کارروائیوں کے حوالے سے ضلع ناظم کا کہنا تھا کہ ضلعی ایڈمنسٹریشن صوبائی ایکٹ کے مطابق کام کر رہی ہے ان کو یہ اختیار حاصل ہے کہ وہ عوام کی بہتری کے لیے اقدامات کریں ضلع بھر میں پسماندہ حلقہ کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ کوھاٹ میں حلقہ 37 سب سے پسماندہ حلقہ ہے جہاں فنڈز کے صحیح استعمال نہ ہونے کی وجہ سے پسماندگی میں اضافہ ہوا حلقہ 39 کی پسماندگی اور نامکمل سکیموں کے متعلق کیے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اس کا جواب وزیر قانون کو دینا چاہیے البتہ یہ ضرور ہے کہ شکردرہ میں پانی کی سکیموں پر کام ہو رہا ہے تعلیم کے منصوبوں پر کام جاری ہے پارٹی میں گروپ بندیوں کے حوالے سے نسیم آفریدی نے اقرار کرتے ہوئے کہا کہ ہر پارٹی میں چھوٹی موٹی گروپ بندی ہوتی ہیں لیکن تحریک انصاف کے ناراض ورکرز کو ہم منا لیں گے اور 2018 کے انتخابات میں ایک دوسرے سے ناراض سب ایک ہی پیچ پر ہوں گے کوھاٹ کی عوام کو پیغام دیتے ہوئے ضلع ناظم نسیم آفریدی نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت اور خصوصاً عمران خان اس ملک کی پسی ہوئی عوام کیلئے امید کی آخری کرن ہیں عوام کو چاہیے کہ پاکستان کی ترقی اور خوشحالی اور اپنی آنے والی نسلوں کے روشن مستقبل کے لیے عمران خان کا ساتھ دے کر تعمیر پاکستان میں اپنا کردار ادا کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں